گجرات اسمبلی انتخابات کے دوسرے اور آخری مرحلے میں انسٹھ فیصد ووٹروں نے ووٹ ڈالے۔            ٭ مین پوری لوک سبھا سیٹ اور پانچ ریاستوں کی چھ اسمبلی سیٹوں کے لیے بھی ضمنی انتخابات کے لیے ووٹنگ ختم۔            ٭ وزیراعظم نے بھارت کی گروپ بیس صدارت کے سلسلے میں سبھی پارٹیوں کی میٹنگ کی صدارت کی۔            ٭ وزیراعظم نے بھارت کی جی ٹوینٹی صدارت کی حمایت کرنے پر عالمی رہنماؤں کے تئیں تشکر کا اظہار کیا ہے۔            ٭ بھارت اور جرمنی نے ایک دوسرے کے ملک میں مائیگریٹ کرنے اور آنے جانے کے سلسلے میں ایک معاہدے پر دستخط کیے۔           
خبروں کی جھلکیاں

Nov 25, 2022
2:58PM

گجرات میں انتخابی مہم زور شور سے جاری ہے۔ اسمبلی انتخابات کے پہلے مرحلے کی چناؤ مہم ختم ہونے میں اب چند روز باقی رہ گئے ہیں۔

AIR PIC

گجرات میں انتخابی مہم زور شور سے جاری ہے۔ ریاست میں اسمبلیانتخابات کے پہلے مرحلے کی چنامہم ختم ہونے میں اب چند روز باقی رہ گئے ہیں۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیرداخلہ امت شاہ آج  Mahuda، Jalod ، Waghara اورنروڈہ میں عوامی جلسوں سے خطاب کررہے ہیں۔ وہ Nandod میں ایک روڈ شو کی قیادت بھیکریں گے۔ مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی بھی وَلساڑ ضلعے میں دو عوامی جلسوں سے خطاب کرنےوالی ہیں۔ مرکزی وزیر دھرمیندر پردھان سورت میں Odia لوگوں میں پارٹی امیدواروںکیلئے انتخابی مہم میں حصہ لیں گے۔ مرکزی وزیر پرشوتم روپالا Navsari، ڈانگ اور سورت ضلعوں میں پانچ انتخابی ریلیوں سے خطاب کررہے ہیں۔دوسری جانب کانگریس کے سینئر لیڈر راجیو شکلا اور آلوک شرما آج احمدآباد میں ایک پریسکانفرنس سے خطاب کریں گے۔ اِسی دوران عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور پنجاب کے وزیراعلیٰبھگونت مان بھی مختلف مقامات پر روڈ شو کریں گے۔ہمارے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہگجرات اسمبلی انتخابات کے پہلے مرحلے میں 89 سیٹوں کیلئے 788 امیدواروں میں سے 167ایسے امیدوار ہیں جن کے خلاف فوجداری معاملات ہیں۔ امیدواروں کی جانب سے پیش کئے گئےحلف نامے کی بنیاد پر جمہوری اصلاحات سے متعلق ایسو سی ایشن ADR کی ایک رپورٹ میں یہ انکشاف کیا گیا ہےکہ اِن میں سے تقریباً 100 امیدواروں کو قتل اور آبروریزی جیسے سنگین الزامات کا سامناہے۔ چناؤمیدان میں بڑی سیاسی پارٹیوں میں عام آدمی پارٹی اُس فہرستمیں سب سے آگے ہے، جس کے 36 فیصد امیدواروں کو فوجداری معاملات کا سامنا ہے۔ پارٹیکے 30 فیصد امیدواروں نے خود اپنے خلاف سنگین نوعیت کے فوجداری معاملات کا اعلان کیاہے۔ کانگریس پارٹی کی جانب سے کھڑے کئے گئے 35 فیصد امیدوار ایسے ہیں، جن کے خلاف فوجداریمعاملات ہیں۔ ان میں سے 20 فیصد امیدوار سنگین فوجداری معاملات کا سامنا کررہے ہیں۔حکمراںBJP پارٹی کے جو چناؤ کے پہلے مرحلے میں سبھی سیٹوں سے چناؤ لڑرہیہے، 16 فیصد امیدوار ایسے ہیں، جن کے مجرمانہ ریکارڈ ہیں۔ جبکہ 12 فیصد امیدواروں کےخلاف سنگین نوعیت کے الزامات ہیں۔ 2017 کے اسمبلی چناؤ میں پہلے مرحلے میں چناؤ لڑنےوالے 15 فیصد امیدوار ایسے تھے، جن کے خلاف فوجداری معاملات تھے۔ ان میں سے 8 فیصدکے خلاف سنگین نوعیت کے فوجداری معاملات تھے۔X


   متعلقہ خبریں

  لائیو ٹوئٹر فیڈ